دوائیوں کے بیچ میں یہ لکیر کیوں ہوتی ہے؟ جانیے دلچسپ اور حیران کُن معلومات

سر میں درد ہو یا کوئی اور مسئلہ گولیاں ہم سب ہی کھاتے ہیں، مگر کیا کبھی ہم میں سے کسی نے اس بات پر غور کیا ہے کہ اکثر گولیوں کے بیچ و بیچ جو ایک لکیر ہوتی ہے اس کا کیا مطلب ہے؟ چلیں آج ہم آپ کو بتاتے ہیں کہ یہ لکیر اکثر گولیوں پر کیوں موجود ہوتی ہے گولیوں کے بیچ یہ لکیر کیوں ہوتی ہے؟

دراصل یہ گولی کو ڈاکٹر کے بتائے کئے مقدار میں کھانے کے لئے ہوتی ہے،مثال کے طور پر اگر ڈاکٹر نے آپ کو گولی کھانے کو دی ہے جو 100 ایم جی کی ہے مگر آپ کو 50 ایم جی کھانے کی ہدایت کی ہے تو آپ اُسے برابر مقدار میں تقسیم کر سکتے ہیں اس لکیر کی مدد سے، اس سے آپ با آسانی گولی کو آدھا بھی کر لیں گے اور زیادہ کھانے کی غلطی بھی نہیں ہوگی .

اس لکیر کو کیا کہا جاتا ہے اور یہ کونسی گولیوں پر ہوتی ہے؟ گولیوں پر موجود اس لکیر کو ڈیبوسڈ لائن کہا جاتا یے، یہ ایک خاص قسم کی دوائیوں پر موجود ہوتی ہے جنہیں آدھا توڑ کر کھانے کی اجازت ہوتی ہےاگر آپ نے کبھی یہ غلطی کی ہے تو آئندہ اس سے پرہیز کریں، اور ابھی ہماری ویب کے فیس بک پیج پر جا کر کمنٹ کریں اور اپنے خیالات کا اظہار کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *