چغل خوری کا نتیجہ

علامہ ذہبی رحمتہ ﷲعلیہ نے ایک حکایت لکھی ہے کہ ایک جگہ ایک غلام بیچا جارہا تھا اور بیچنے والا یہ ندا لگا رہا تھا کہ اس غلام میں کوئی عیب نہیں ہے، سوائے اس کے کہ یہ چغل خور ہے۔ ایک شخص نے یہ غلام خرید لیا اور اس عیب کو معمولی سمجھا۔ چند دنوں کے بعد اس غلام نے اس شخص کی بیوی سے کہا کہ کچھ خبر بھی ہے، کہ تمھارے میاں ایک اور عورت سے شادی رچانے والے ہیں اور وہ تم سے محبت نہیں کرتا

، اگر تم چاہتی ہو کہ وہ تم سے محبت کرے ؛ تو تم اس کے سونے کے وقت اس کی ڈاڑھی کے نیچے سے چند بال استرے سے کاٹ کر اپنے پاس رکھ لو ، اس عورت نے سوچا کہ صحیح ہوگا اور اس غلام کی تدبیر پر عمل کرنے کا ارادہ کرلیا ، اس غلام نے پھر اس کے آقا سے جاکر کہا کہ تمھاری بیوی نے اپنا دوست بنا رکھا ہے اور وہ تم کو ختم کرنے کی تدبیر کررہی ہے ؛ اگر تم کو میری بات کی تصدیق کرنا ہو ، تو آج رات تم بستر پر یوں ہی لیٹ جاٶ اور سونے والوں کی طرح اپنے آپ کو ظاہر کرو ٬ پھر دیکھو کہ کیا ہوتا ہے ؟ جب رات ہوئی تو بیوی بال نکالنے کے لیے شوہر کی ٹھوڑی کی طرف استرہ لے کر بڑھی ، ادھر شوہر جو کہ پہلے سے بیدار تھا فوراً اس کے ہاتھ پکڑ لیا اور غلام کی بات کو سچ سمجھ کر بیوی کو قتل کردیا ؛ پھر بیوی کے خاندان والوں نے شوہر کو پکڑ کر قتل کردیا ۔

دیکھا کہ چغلی کا کیا نتیجہ ہوتا ہے ؟ اور کس طرح معاشرہ میں فساد پھیلتا ہے! اس لیے اس لعنت سے خود بھی بچیں اور دوسروں کو بھی بچانے کی کوشش کریں۔

اللہ تعالیٰ چغل خوری جیسے گناہ کبیرہ سے ہماری اور ہمارے اہل و عیال کی حفاظت فرماٸے اور ہمیں نیک اعمال کی توفیق نصیب فرماٸے۔

(واقعات پڑھئے اور عبرت حاصل کیجئے)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *