میری ماں کون خریدے گا ۔

شادی کی تقریب جاری تھی کہ دلہن نے دلہا کے کان میں کہا کہ اپنی ماں کو اسٹیج سے نیچے اتار دو یہ مجھے اچھی نہیں لگتی ۔ دولہن کی خو بصورتی کو دیکھتے ہی دولہا فورا اٹھا اور اعلان کرنے لگا کہ میں ابھی اور اس وقت اپنی ماں کو بیچنا چاہتا ہوں میری ماں کو مجھ سے کون خریدے گا ۔

یہ سنتےایک شادی کی تقریب بڑے دھوم دھام سے جاری تھی ۔ دولہا اور دلہن بڑی شان و شوکت کے ساتھ سٹیج پر بیٹھے ہوۓ تھے کہ دلہن نے دلہا کے کان میں کہا ۔ اپنی ماں کو سٹیج سے نیچے اتار دور کیونکہ میں اسے پسند نہیں کرتی ۔ یہ سنتے ہی دلہا فورا اٹھا , اور مائیک پکڑ کر تین دفعہ اعلان کیا ۔ میں اپنی ماں کو فروخت کرنا چاہتا ہوں ،

مجھ سےمیری ماں کون خریدے گا ۔ ایسا عجیب و غریب اعلان سنتے ہی حاضرین پر سناٹا طاری ہو گیا ۔ پھر دلہے نے دوبارہ اعلان کیا ۔ اور بولا کہ میں خود ہی اپنی ماں کو خریدوں گا ۔ اس کے بعد دلہے نے شادی کی انگو ٹھی اتار کر سچھینک دی , اور دلہن کو اسی وقت طلاق دے کر ماں کے قدموں میں بوسہ دیتے ہوۓ کہنے لگا کہ میں نے نفع کا سودا کر لیا ۔ یہسارا ماجرہ دیکھتے ہوۓ وہاں سے ایک آدمی کھڑا ہو کر کہنے لگا کہ میں اس نوجوان کے ساتھ اپنی بیٹی کا نکاح کرتا ہوں ۔ کیونکہ اس سے بہتر میری بیٹی کو شوہر نہیں مل سکتا ۔ اس طرح اس نوجوان نے دنیا بھی کما لی اور اپنی جنت یعنی ماں بھی ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *